Posts

Showing posts with the label Tafseer

Quran, Urdu Translation & Commentary, قرآن کریم اردو ترجمہ و تفسیر, Tafseer, تفسیر,Salahuddin Yousuf, صلاح الدین یوسف,Muhammad Junagarhi,محمد جونا گڑھی,

Image
  Quran-e-Kareem with Urdu Translation and Commentary, قرآن کریم مع اردو ترجمہ و تفسیر , Tafseer, تفسیر , Translation : Molana Muhammad Junagadhi Commentary: Salahuddin Yousuf ترجمہ : مولانا محمد جونا گڑھی تفسیر : حافظ صلاح الدین یوسف خادم الحرمین شیریفین شاہ فہد بن عبد العزیز آل سعود حفظہ اللہ نے کتاب الہی کی خدمت کے سلسلے میں جو ہدایات دی ہیں ان میں قرآن مجید کی طباعت، وسیع پیمانے پر مسلمانان عالم میں اسکی تقسیم کے اہتمام اور دنیا کی مختلف زبانوں میں ترجمہ اور تفسیر کی اشاعت پر خاص طور سے زور دیا گیا ہے۔ "وزارۃ الشوون السلامیۃ والاوقاف و الدعوۃ و الارشاد" کی نظر میں عربی زبان نے ناواقف مسلمانوں کے لئے قرآن فہمی کی راہ ہموار کرنے اور تبلیغ کی اس ذمہ داری سے عہدہ برآ ہونے کے لئے جو رسول اکرم ﷺ کے ارشاد گرامی "بلغو عنی ولو آیۃ" میری جانب سے لوگوں تک پہنچاؤ خواہ ایک ہی آیت کیوں نہ ہو۔ میں بیان کی گئی ہے، دنیا کی تمام اہم زبانوں میں قرآن مجید کے مطالب کو منتقل کیا جانا انتہائی ضروری ہے۔ خادم الحرمین شریفین کی انہی ہدایات اور وزارت برائے اسلامی امور کے اسی احس

Mazameen-e-Quran-e-Hakeem, Zahid Malik, Tafseer, مضامین قرآن حکیم, زاھد ملک, تفسیر,

Image
Mazameen-e-Quran-e-Hakeem, Zahid Malik , Tafseer, مضامین قرآن حکیم, زاھد ملک , تفسیر , مضامین قرآن حکیم میں خدائے ذوالجلال کے عظیم کلام کو آٹھ سو اہم اور جامع عنوانات میں اس طرح تقسیم کیا گیا ہے کہ ہر ایک موضوع پر ایک سو چودہ سورتیں یا تیس پاروں یعنی پورے قرآن حکیم میں تمام آیات مبارکہ کو یکجا کر دیا گیا ہے۔ اب اگر مجھ جیسا عام مسلمان یہ معلوم کرنا چاہے کہ اللہ تبارک و تعالی نے قرآن کریم میں مثلا تجارت کے متعلق کیا فرمایا ہے تو وہ بجائے اس کے کہ قرآن پاک میں پھیلی ہوئی متعلقہ ہدایات اور احکامات کو تلاش کرتا پھرے، ایک منٹ سے بھی کم وقت میں "تجارت" پر تمام آیات کریمہ کو اپنے سامنے پائے گا۔ مجھے یقین ہے کہ اس طرح وہ پورا قرآن حکیم نہ سہی کم از کم متعقلہ موضویعنی تجارت پر قرآن حکیم کا مدعا ضرور سمجھ جائے گا۔ قرآنی تعلیمات تک یوں آسان اور سہل انداز میں دسترس عام مسلمانون میں قرآنی ہدایات و احکامات کو براہ راست سمجھنے اور ان پر عمل کرنے میں مدد ملے گی۔ قرآن کریم کے بعض موضوعات اللہ تعالی کو بڑے مرغوب ہیں۔ مثلا توحید، رسالت، آخرت اور جزا و سزا وغیرہ۔ ایسے موضوعات پر قرآن کریم میں سی

Jame-ul-Ahkam-il-Quran, Tafseer-e-Qurtabi, Muhammad bin Ahmad Al-Qurtabi, Tafseer, تفسیر, محمد بن احمد القرطبی, جامع الاحکام القرآن, تفسیر قرطبی, پیر کرم شاہ, Pir Karam Shah,

Image
 Jame-ul-Ahkam-il-Quran Tafseer-e-Qurtabi Muhammad bin Ahmad Al-Qurtabi Tafseer,  تفسیر محمد بن احمد القرطبی جامع الاحکام القرآن تفسیر قرطبی پیر کرم شاہ ,  Pir Karam Shah تفسیر قرطبی جس کا اصل نام "الجامع لأحکام القرآن" ہے عربی کی ایک مشہور و معروف تفسیر ہے۔ اس کے مفسر محمد بن احمد بن ابی بکر بن فرح انصاری خزرجی القرطبی ہیں جنہوں نے ساتویں صدی ہجری میں اس کو   عربی میں لکھا۔ حضرت قبلہ پیر کرم شاہ صاحب نے اس کا عربی سے اردو میں ترجمہ کیا جو کہ تفسیر قرطبی کہلاتا ہے اور اس کو ضیاء القرآن پبلیکیشنز نے چھاپا۔ یہ اپنے وقت کی عظیم الشان تفسیر ہے، اس میں قرآن کے معانی اور احکام کی تفصیل بڑی وضاحت سے کی گئی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ اس میں قرآت، اعراب، لغوی مباحث کے علاوہ صرفی و نحوی نکات کا بھی ذکر کیا گیا ہے۔   یہ مندرجہ ذیل اسلوب پر لکھی گئی ہے۔   1۔ سب سے پہلے سورۃ کی فضیلت اور اس کے متعلق جو احادیث ہیں علامہ قرطبی پہلے ان کا ذکر کرتے ہیں۔ 2۔ اسباب نزول بیان کرتے ہیں اور اس کے لیے احادیث کا ذکر کرتے ہیں اور کئی جگہ عربی ادب کے شعروں سے تائید لاتے ہیں۔ 3۔ آیات کے متعلقہ فقیہ ا

Tafseer Durr-e-Mansoor, Jalaluddin Al-Suyuti, Tafseer, تفسیر در منثور, جلال الدین السیوطی, تفسیر, پیر کرم شاہ, Pir Karam Shah,

Image
 Tafseer Durr-e-Mansoor, Jalaluddin Al-Suyuti , Tafseer, تفسیر در منثور, جلال الدین السیوطی , تفسیر, Translated by : Pir Karam Shah , ترجمہ ۔ پیر کرم شاہ الازھری علامہ ابن خلدون رحمہ اللہ نے اپنے شہرہ آفاق مقدمہ میں لکھا ہے کہ قرآن حکیم عربوں کی لغت اور اس کے اسالیب بلاغت میں نازل ہوا ہے۔ وہ اس کے معانی کو مفردات و تراکیب کے لحاظ سے سمجھتے تھے۔ نیز قرآن جملوں اور آیات کی صورت میں توحید و فرائض دینیہ کے بیان کے لیے حسب ضرورت نازل ہوتا رہا۔ بعض آیات عقائد ایمانیہ پر مشتمل ہیں، بعض ظاہری احکام کو بیان کرتی ہیں، بعض مقدم اور بعض موخر ہیں۔ بعض موخر، مقدم کے لیے ناسخ ہوتی ہیں۔ نبی کریم ﷺ مجمل کی تفسیر خود بیان فرماتے تھے اور ناسخ و منسوخ میں خود ہی امتیاز فرماتے تھے۔ صحابہ کرام رضی اللہ عنہم اس کو جانتے تھے اور آیات کے اسباب نزول بھی پہچانتے تھے اور اس کے منقول ہونے کے حال کا مقتضی بھی صحابہ کرام کو معلوم تھا جیسا کہ اللہ تعالی کے ارشاد سے معلوم ہوتا ہے۔ اذا جا نصر اللہ والفتح۔ اس آیت کریمہ نے نبی کریم ﷺ کے وصال کی خبر دی۔   علامہ موصوف رحمہ اللہ فرماتے ہیں : قرن اول سے قرآن سینہ بسینہ منت

Bayan-ul-Quran, Dr. Israr Ahmad, Tafseer, بیان القرآن, ڈاکٹر اسرار احمد, تفسیر,

Image
  Bayan-ul-Quran, Dr. Israr Ahmad , Tafseer,  بیان القرآن, ڈاکٹر اسرار احمد , تفسیر ,   عرض مرتب: قرآن حکیم نوع انسانی کے لئے اللہ تعالی کا آخری اور تکمیلی پیغام ہدایت ہے، جسے نبی آخر الزماں محمد رسول اللہ ﷺ کی دعوت و تبلیغ میں مرکزو محور کی حیثیت حاصل تھی۔ آپ ﷺ نے اس قرآن کی بنیاد پر نہ صرف دنیا کو ایک نظام عدل اجتماعی عطا فرمایا بلکہ اس عادلانہ نظام پر مبنی ایک صالح معاشرہ بھی بالفعل قائم کر کے دکھایا۔ آپ ﷺ نے اس قرآن کی راہنمائی میں انقلاب کے تمام مراحل طے کرتے ہوئے نوع انسانی کا عظیم انقلاب برپا فرما دیا۔ چنانچہ یہ قرآن محض ایک کتاب نہیں "کتاب انقلاب" ہے، اور اس شعور کے بغیر قرآن مجید کی بہت سی اہم حقیقتیں قرآن کے قاری پر منکشف نہیں ہو سکتیں۔ اللہ تعالی جزائے خیر عطا فرمائے صدر مؤسس مرکزی انجمن خدام القرآن لاہور اور بانئ تنظیم ڈاکٹر اسرار احمد حفظہ اللہ کو جنہوں نے اس دور میں قرآن حکیم کی اس حیثیت کو بڑے وسیع پیمانے پر عام کیا ہے کہ یہ کتاب اپنی دیگر امتیازی حیثیتوں کے ساتھ ساتھ محمد ﷺ کا آلہ انقلاب اور آپ ﷺ کے برپا کردہ انقلاب کے مختلف مراحل کے لئے بمنزلہ مینول بھی ہ

Tazkeer-ul-Quran, Wahiduddin Khan, Tafseer, تذکیرالقرآن, وحید الدین خان, تفسیر,

Image
 Tazkeer-ul-Quran, Wahiduddin Khan , Tafseer, تذکیرالقرآن, وحید الدین خان , تفسیر, قرآن اگرجہ ایک اعلی ترین علمی کتاب ہے۔ اس فطری حدود کے اند علم و عقل کی پوری رعایت رکھی گئی ہے۔ مگر قرآن میں کسی بات کو ثابت کرنے کے لیے معروف علمی اور فنی انداز اختیار نہیں کیا گیا ہے۔ قرآن کا طریقہ یہ ہے کہ فنی آداب اور علمی تفصیلات کو چھوڑ کر اصل بات کو مؤثر دعوتی اسلوب میں بیان کیا جائے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ قرآن کا مقصد علمی مطالعہ پیش کرنا نہیں ہے۔ اس کا مقصد تذکیر و نصیھت ہے اور تذکیر و نصیھت کے لئے ہمیشہ سادہ اسلوب کارآمد ہوتا ہے نہ کہ فنی اسلوب۔  تاہم یہ ایک طالب علمانہ ضرورت ہے کہ قرآن کا مطالعہ کرتے ہوئے ایک آدمی قرآن کے بیانات کی علمی تفصیلات اور اس کے فنی پہلوؤں کو جاننا چاہے۔ ایسی حالت میں یہ سوال ہے کہ قرآن کی تفسیر کے لئے کیا انداز اختیار کیا جائے۔ قرآن کی تفسیر اگر اس کے اپنے سادہ دعوتی اسلوب میں کی جائے تو اس کا یہ فائدہ ہوگا کہ تفسیر میں نصیحت اور تذکیر کی فضا باقی رہے گی جو قرآن کا اصل مقصود ہے۔ مگر ایسی صورت میں خالص علمی تقاضوں کی رعایت نہ ہو سکے گی۔ دوسری طرف اگر علمی و فنی پہلوؤں کو

Tafseer E Majidi, By Abdul Majid Daryabadi, تفسیر ماجدی، عبدالماجد دریاآبادی

Image
Tafseer E Majidi, By Abdul Majid Daryabadi, تفسیر ماجدی، عبدالماجد دریاآبادی Download Server1