Posts

Showing posts with the label حکیم یاسین دنیاپوری

Qanoon Mufrid Aza ke Tibbi Mashwaray, قانون مفرد اعضاء کے طبی مشورے, Health, Medicine,صحت, طب, حکیم یاسین دنیاپوری, Hakim Yasin Dunyapuri,

Image
 Qanoon Mufrid Aza ke Tibbi Mashwaray, قانون مفرد اعضاء کے طبی مشورے, Health, Medicine,صحت, طب,  اس کتاب میں ان تمام خطوط کے جوابات جو مختلف امراض کے علاج اور طبی مسائل کے سلسلے میں حکماء حضرات اور مریضوں نے یاسین دواخانہ دنیا پور ارسال کئے قارئیں کے بے حد اسرار پر کتابی صورت میں پیش کئے جارہے ہیں امید ہے قارئین ہماری اس کوشش کو پسند فرمائیں گے۔ Download / Read

Taaruf Qanoon Mufrid Aza, Hakim Yasin Dunyapuri, Health, Medicine, تعارف قانون مفرد الاعضاء, حکیم یاسین دنیاپوری, صحت, طب,

Image
Taaruf Qanoon Mufrid Aza, Hakim Yasin Dunyapuri, Health, Medicine, تعارف قانون مفرد الاعضاء, حکیم یاسین دنیاپوری, صحت, طب, ہم اپنی اس علمی کوشش کو جو خالص و صداقت کے تحت کی گئی ہے تاکہ احیائے فن اور تجدید طب میں جلد از جلد کامیابی حاصل ہو سکے اور مجدد طب حکیم انقلاب المعالج صابر ملتانی کی تحقیقات ملک کے اند اور بیرون ملک پھیل سکیں۔ اپنے دوستوں، ساتھیوں اور بزرگوں کے نام نامی اور اسم گرامی سے موسوم کرتا ہوں جنہوں نے دنیا پور میں حلقہ تحریک تجدید قائم کرنے اور نظریہ مفرد اعضاء کی نشرواشاعت میں میری وقت اور بے وقت  ہر ممکن مدد کی۔ اور آئندہ بھی مجھے ان سے بہت سے امیدیں وابستہ ہیں۔ حکیم یاسین و حکیم محمد شریف جولائی 1974ء۔ Read Book

Tahqiqat-o-Elaj Amraz-e-Meda wa Amaa, Hakim Yasin Dunyapuri, Medicine, تحقیقات و علاج امراض معدہ وامعاء, حکیم یاسین دنیاپوری, طب,

Image
Tahqiqat-o-Elaj Amraz-e-Meda wa Amaa, Hakim Yasin Dunyapuri, Medicine, تحقیقات و علاج امراض معدہ وامعاء, حکیم یاسین دنیاپوری, طب,  امراض چشم امراض طبقہ صلبیہ : طبقہ صلبیہ وہ (ریشہ دار مضبوط) پردہ یا طبقہ ہے، جو دماغی موٹی جھلی سے پیدا ہوا ہے۔ یہ جھلی بینائی کے پٹھے پر لپٹی ہوئی یا اس سے متصل ہوتی ہے۔ (یہ طبقہ تمام طبقات سے باہر ہوتا ہے، سامنے کی طرف اسی طبقہ سے قرنیہ بن جاتا ہے، جو تقریباً چھٹا حصہ ہوتا ہے)۔ بعض اطباء اس طبقہ کہ طبقہ شمار نہیں کرتے، بلکہ ایک جھلی کہتے ہیں۔ اس لحاظ سے طبقات چشم چھے ہوتے ہیں۔ (مگر اس کو طبقہ نہ کہنا غلط ہے)۔ طبقات چشم کے شمار میں مشرحین کا اختلاف عرصہ سے چلا آرہا ہے۔   بعض اطباء انہیں تین کہتے ہیں بعض پانچ اور بعض چھ، علاوہ ازیں بعض ایک، یا دو، یا چار یا سات بھی کہتے ہیں۔ مگر حقیقت میں  پہلے تین اقوال کی توجیہ درست ہو سکتی ہے۔ اور پچھلے تینوں اقوال کی تاویل موجہ طور پر گز نہیں ہو سکتی ہے۔ یہ بھی یاد رکھو کہ یہ اختلاف محض طرز بیان کا اختلاف ہے وہرنہ طبقات چشم میں ہر ایک مشرح نے اپنے طرز بیان سے سب کو بیان کیا ہے۔ مثلاً جو لوگ تین طبقات کہتے ہیں وہ طبق

Tahqiqat Ilm-ul-Mujarbat, Hakim Yasin Dunyapuri, Medicine, تحقیقات علم المجربات, حکیم یاسین دنیاپوری, طب,

Image
Tahqiqat Ilm-ul-Mujarbat, Hakim Yasin Dunyapuri, Medicine, تحقیقات علم المجربات, حکیم یاسین دنیاپوری, طب,    اس دنیا میں ہر حکیم، طبیب اور ڈاکٹر کی یہی خواہش ہوتی ہے کہ اس کو ہر مرض کے لئے مجرب المجرب نسخے مل جائیں جنہیں کھلاتے ہی مرض دم دبا کر بھاگ جائے لیکن وہ قیمتی اجزاء پر مشتمل نسخہ جات کو بھی مفید نہیں پاتا تو مایوس اور پریشان ہو جاتا ہے اس کی وجہ یہ ہے کہ مجربات کسی اصول اور قاعدہ سے بالا اعضاء کتابوں میں نہیں دیے ہوتے اور نہ ہی معالج انہیں بالاعضاء استعمال کراتے ہیں اور ناکام رہتے ہیں۔   میں نے اس کتاب میں قانون مفر اعضاء کے تحت اعصابی غدی اور عضلاتی امراض کے تحت ہر علامت کی تشریھ کے بعد بالاعضاء مجربات پیش کئے ہیں۔ اس کے مطالعہ سے انشاء اللہ مجربات کے متلاشیوں کی پیاس بجھ جائے گی۔    مصنفہ:  الحاج حکیم محمد یاسین دنیاپوری شاگرد رشید  حکیم انقلاب المعالج صابر ملتانی۔ ترتیب و توضیح: حکیم محمد دنیا پوری ملنے کا پتہ: یاسین دواخانہ و طبی کتب خانہ دنیاپور، لاہور Download

Tahqiqat Israr-e-Nabz, Hakim Yaseen, Medicine, تحقیقات اسراز نبض, حکیم یاسین دنیاپوری, طب,

Image
 Tahqiqat Israr-e-Nabz, Hakim Yaseen, Medicine, تحقیقات اسراز نبض, حکیم یاسین دنیاپوری, طب, اس کتاب میں طب قدیم کے علم النبض کے وسیع و عریض سمندر کو قانون مفرد اعضاء کے تحت کوزے میں بند کر کے صرف تین نبضوں، اعصابی، غدی اور عضلاتی میں تقسیم کر کرے پیش کیا گیا ہے۔ جس کے صرف ایک بار مطالعے سے طالب علم علم النبض پر مہارت حاصل کر کے بلند مقام پیدا کر سکتا ہے۔ نبی اکرم ﷺ نے ماہیت و حقیقت امراض کے متعقل جو طبی تعلیم ہمیں دی ہے اس کے متعلق فرماتے ہیں۔  "بے شک انسانی جسم میں ایک گوشت کا لوتھڑا ہے وہ اگر صحت مند ہو تو سارا بدن درست ہے یعنی صحت مند ہے اور اگر اس میں کوئی بیماری یا فساد پیدا ہوجائے تو سارا بدن (جسم) بیمار ہو جاتا ہے وہ دل ہی ہے"۔ دوسرے معنوں میں یوں سمجھ لیں کہ دل اور جسم کے تمام اعضاء لازم و ملزوم ہیں اگر ان سے دل بیمار ہو جائے تو تمام جسم کے اعضاء بیمار پر جائیں گے اور اگر جسم کے کسی عضو میں بھی تکلیف ہو جائے تو دل بیار ہو جائے گا جس کا اثر جسم کے تمام اعضاء میں محسوس کیا جائے گا۔   Download